اس پرچم کے سائے تلے ہم ایک ہیں
پاکستان سے آنے والی سرکردہ حکومتی شخصیات چوہدری وسیم اور ندیم عباس بارا کے اعزاز میں یادگار تقریب
اوورسیز پاکستانیوں کے جائیدادوں کے مقدمات 6 ماہ میں نمٹائے جائینگے
وائس چیئرمین اوورسیز پاکستانیز کمیشن پنجاب کا خطاب
قسم کھا کر کہتا ہوں کہ پاکستان میں تبدیلی آئے گی اور آ کر رہے گی:حافظ محمد شبیر
عمران خان دنیا بھر میں گرین پاسپورٹ کی عزت کیلئے کام کر رہے ہیں: ملک ندیم عباس بارا
پاکستان بزنس سنٹر کویت کے زیر اہتمام کویت کے دورہ پر آنے والی سرکردہ حکومتی شخصیات چوہدری وسیم اختر وائس چیئرمین اوورسیز پاکستانیز کمیشن پنجاب اور ملک ندیم عباس بارا کے اعزاز میں ایک یادگار تقریب کاانعقاد کیا گیا جس میں کمیونٹی کے ہر طبقہ فکر سے تعلق رکھنے والی شخصیات نے شرکت کی، اسی مناسبت سے پروگرام کا نام ،،اس پرچم کے سائے تلے ہم ایک ہیں ،، رکھا گیا۔تقریب سے خطاب کرتے ہوئے چوہدری وسیم اختر نے کہا کہ وہ پاکستان بزنس سنٹر کے ڈائریکٹر جنرل حافظ محمد شبیر کے شکر گذار ہیں جنہوں نے انہیں کویت آنے اور پاکستانی کمیونٹی سے رابطے کا موقعہ فراہم کیا۔
آپ کو اپنے کیسز ڈیل کرنے کیلئے وطن نہیں جانا پڑے گا ،ہم آپ کے نمائندے کے طور پر آپ کے مقدمات لریں گے۔آپ کویت میں پاکستانی مصنوعات کو فروغ دینے کیلئے دن رات کام کر رہے ہیں۔کمیونٹی مسائل پر عزت مآب سفیر پاکستان سے بات ہوئی ہے،جیلوں میں بند پاکستانیوں کے بارے میں بھی رپورٹ حاصل کر لی ہے،جرائم کے حوالہ سے دیگر کمیونٹیز کے مقابلہ میں پاکستانیوں کا تناسب بہت کم ہے،سب سے بڑا مسئلہ کویت پاکستان روٹ پر پی أئی اے پروازوں کی بحالی کا ہے ،وہ اس مسئلہ کو ہر فورم پر اتھائیں گے ،وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی اور وزیراعظم عمران خان سے بھی اس بارے میں بات کریں گے ،کوشش کریں گے کہ جلد از جلد یہ مسئلہ حل ہو جائے۔
قبل ازیں تقریب کا آغاز تلاوت قرآن مجید سے ہوا جس کی سعادت حافظ عامر شبیر نے حاصل کی،کمپئرنگ کے فرائض محمد افضل شافی نے انتہائی خوبصورتی سے انجام دئیے،مقررین کو اسٹیج پر بلوانے سے پہلے وہ اشعار کا انتخاب اتنی مہارت سے کرتے ہیں کہ محسوس ہوتا ہے کہ وہ اشعار ان کے لئے ہی کہے گئے ہیں،انہوں نے ھدیہ عقیدت پیش کرنے کیلئے ووپ میڈیا کے سی ای او طارق اقبال کو اسٹیج پر آنے کی دعوت دی،ہر دل میں ہے نام محمد صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم پیش کر کے سماں باندھ دیا۔کویت اور پاکستان کے قومی ترانے ہیش کئے گئے جن کے احترام میں تمام شرکاء خاموش اور باادب کھڑے ہو گئے۔
کویت میں انصاف ویلفیئر سوسائٹی کے بانی صدر ارشد نعیم چوہدری تقریب کے پہلے مقرر تھے،انہوں نے کہا کہ وہ چوہدری وسیم اختر اور ملک ندیم عباس بارا کو کویت میں خوش آمدید کہتے ہیں، انہوں نے 2006 میں کویت میں آم کا پودا لگایا تھا جو اب ایک تناور درخت بن چکا ہے،اللہ تعالیٰ کا کرم ہے کہ ہم کویت میں رہ کر پاکستان کی خدمت کر رہے ہیں۔یو کے انٹر نیشنل کے سی ای او محمد جمیل نے خطاب کرتے ہوئے تقریب کے میزبان اور ڈائریکٹر جنرل پاکستان بزنس سنٹر حافظ محمد شبیر کو زبردست خراج تحسین پیش کرتے ہوئے کہا کہ وہ کویت میں پاکستانی مصنوعات کے فروغ کے لیے دن رات کام کر رہے ہیں،کمیونٹی کی ممتاز کاروباری وسماجی شخصیت شمشاد احمد خان تنولی،سینئر رہنما انصاف ویلفیئر سوسائٹی کویت نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ وہ اپنے مستقبل کے لیڈر حافظ محمد شبیر کو خراج تحسین پیش کرتے ہیں جنہوں نے مختصر وقت میں اتنا شاندار پروگرام ترتیب دیا ،وہ چوہدری وسیم اختر اور ملک ندیم عباس کو کویت میں خوش آمدید کہتے ہیں، حافظ محمد شبیر کمیونٹی کی خدمت کیلئے دن رات محنت کر رہے ہیں، انہوں نے پی آئی اے پروازوں کی بحالی کیلئے ہماری آواز پارلمینٹ ہاؤس اور حکام بالا تک پہنچائی ،انہیں امید ہے کہ وہ پی آئی اے کی پروازیں بحال کرانے میں کامیاب ہو جائیں گے۔ماجد علی چوہدری ممبر بورڈ آف گورنرز اوپی ایف نے خطاب کرتے ہوئے چوہدری وسیم اختر اور ملک ندیم عباس بارا کا شکریہ ادا کہ وہ کویت میں مقیم پاکستانی کمیونٹی کے مسائل سے آگہی کیلئے تشریف لائے۔وسیم اختر کے پاس بڑے ایماندار لوگوں کی ٹیم موجود ہے جن میں ڈی آئی جی ناصر مختار بھی شامل ہیں جنہوں نے ایف ایس سی تک تعلیم کویت سے حاصل کی ،انہوں نے یقین دہائی کرائی ہے کہ اب اوورسیز پاکستانیز کے مقدمات کا فیصلہ 6 ماہ میں ہو گا۔وسیم چوہدری اور انہوں نے لاہور میں ایک پی کالج سے تعلیم حاصل کی، وہ ان سے ایک سال سینئر تھے،حافظ محمد شبیر صاحب کو وہ پچھلے بیس سال سے جانتے ہیں ،وہ کویت میں کمیونٹی کی خدمت اور پاکستانی مصنوعات کے فروغ کیلئے دن رات کام کر رہے ہیں۔ محمد عارف بٹ صدر پاکستان بزنس کونسل نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ وہ معزز مہمانان چوہدری وسیم اختر اور ملک ندیم عباس بارا کو کویت میں خوش آمدید کہتے ہیں،آج سفارت خانہ میں معزز مہمانان کی عزت مآب سفیر پاکستان غلام دستگیر سے ملاقات ہوئی،اس موقعہ پر انہیں کمیونٹی مسائل سے آگاہ کیا گیا ،انہوں نے ان مسائل کے حل کی یقین دیانی کرائی۔ کویت میں مقیم پاکستانی کمیونٹی ایک عظیم کمیونٹی ہے ،ہم اس پرچم کے سائے تلے ایک ہیں۔
پاکستان سے آنے والے معزز مہمان ملک ندیم عباس بارا رکن پنجاب اسمبلی نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ یہ ان کی خوش قسمتی ہے کہ وہ کویت میں رہنے والے بھائیوں اور بزرگوں کے درمیان ہیں،آپ لوگ محنت مزدوری کر کے پیسے پاکستان بھیجتے ہیں ،کچھ لوگ چالیس پچاس سال سے کویت میں محنت کر رہے ہیں مگر افسوس گذشتہ حکومتوں انہیں سہولتیں فراہم نہیں کیں مگر وزیراعظم عمران خان نے ہمیشہ اوورسیز پاکستانیوں کیلئے بات کی،انہوں نے پاکستانی تارکین وطن کیلئے الگ ادارہ بنایا،بیرونی ممالک کی جیلوں سے قیدی چھڑوانے۔وہ دنیا بھر میں مقیم پاکستانیوں کی عزت بحال کرانے کیلئے کام کر رہے ہیں،وہ وقت دور نہیں جب دنیا بھر میں گرین پاسپورٹ کی عزت ہوگی ،وہ حافظ محمد شبیر کا شکریہ ادا کرتے ہیں جنہوں نے کویت مدعو کیا اور پاکستانی کمیونٹی سے ملاقات کا موقعہ فراہم کیا ۔
تقریب کے میزبان حافظ محمد شبیر نے اپنے اختتامی کلمات میں کہا کہ وہ معزز مہمانان چوہدری وسیم اختر اور ملک ندیم عباس بارا کا شکریہ ادا کرتے ہیں جو ان کی دعوت پر کویت تشریف لائے اور کمیونٹی کے مسائل سنے، انہیں یاد ہے انہوں نے اسی ہال میں قسم کھائی تھی کہ عمران خان وہ لیڈر ہے جسے خریدا نہیں جاسکتا،وہ آج پھر قسم کھا کر کہتے ہیں کہ تبدیلی آئے گی اور آ کر رہے گی، ہم سب نے مل کر تبدیلی لانی ہے ،انہوں نے علامہ اقبال کا مشہور شعر پڑھا
تندی باد مخالف سے نہ گھبرا اے عقاب
یہ تو چلتی ہے تجھے اونچا اڑانے کیلئے
انہوں نے وعدہ کیا تھا کہ حکومتی شخصیات کو ان کے سامنے لائیں گے،آج چوہدری وسیم اختر وائس چیئرمین اوورسیز پاکستانیز کمیشن پنجاب کو کمیونٹی کے سامنے پیش کرکے یہ وعدہ پورا کردیا ہے ،وہ چوہدری وسیم اختر اور ملک ندیم عباس کا شکریہ ادا کرتے ہیں جنہوں نے کویت میں مقیم پاکستانی کمیونٹی کے مسائل بڑے غور سے سنے اور ان کے حل کی یقین دہائی کرائی ،وہ خود بھی ان سے رابطے میں رہیں گے ،انشاء اللہ ان مسائل کو حل کرا کے رہیں گے۔ آخر میں ملک ندیم عباس اور چوہدری وسیم اختر کو یادگاری
شیلڈز پیش کی گئیں۔ حافظ محمد شبیر کی دعا کے ساتھ یہ تقریب اختتام کو پہنچی ،شرکاء کیلئے پرتکلف عشائیہ کا بھی اہتمام کیا گیا تھا۔